Education NewsLatest NewsNational NewsUrdu News

فیس بک پر ملک مخالف پوسٹ کرنے کے الزام میں بنگلور میں تین کشمیر طلبا ءگرفتا ر ایک ماہ کے بعد بھی عدالت میں ضمانتی درخواست رد ، اہلخانہ فکر و تشویش میں ، گورنر سے مداخلت کی اپیل

Web Desk

فیس بک پر ملک مخالف پوسٹ کرنے کے الزام میں بنگلور میں تین کشمیر طلبا ءگرفتا ر

ایک ماہ کے بعد بھی عدالت میں ضمانتی درخواست رد ، اہلخانہ فکر و تشویش میں ، گورنر سے مداخلت کی اپیل

 

بیرون ریاستوں میں زیر تعلیم کشمیری طلبا ءکا تحفظ یقینی بنانے کے بڑے دعوﺅں کے بیچ بنگلور کے ایک نجی نرسنگ کالج میںزیر تعلیم شمالی کشمیر کے تین طالب علموں کو فیس بک پر مبینہ طور ملک مخالف پوسٹ کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے تاہم ایک ماہ گزر نے کے باوجود بھی ان کی رہائی عمل میں نہیں لائی گئی ۔اسی دوران معلوم ہوا ہے کہ تین مرتبہ ضمانت درخواست کی تاریخ مقرر ہونے کے بعد بنگلور کی ایک عدالت نے گزشتہ دنوں تینوں طالب علموں کی رہائی کی ضمانت درخواست مسترد کی ہے ۔جس کے نتیجے میں انکے اہلخانہ فکر و تشویش میں مبتلا ہو گئے ہیں جبکہ وادی کے طلبہ ان کے رہائی کے مانگ کو لیکر سراپا احتجاج بنے ہوئے ہیں ۔ سی این آئی کے مطابق پلوامہ حملے کے بعد بیرون ریاستوں میں زیر تعلیم کشمیری طلبہ کی ہراسانی اور ان پر حملوں کے بعد جہاں مرکزی سرکار نے تمام ریاستوں کے نام ایڈوئزری جاری کی تھی کہ کشمیری طالب علموں کا تحفظ یقینی بنایا جائے وہیں سپر دی گروپ آف انسٹی چیوٹ بنگلور جوکہ ایک نرسنگ کالج ہے میں زیر تعلیم شمالی کشمیر سے تعلق رکھنے والے تین طالب علم کو 16فرور ی کو گرفتار کیا گیا ہے اور ابھی تک ان کی رہائی عمل میں نہیں لائی گئی ۔ معلوم ہوا ہے کہ بنگلور پولیس نے نرسنگ کالج میں زیر تعلیم کشمیری طلبا گوہر مشتاق میر ولد مشاق احمد میر ساکنہ سیرو سوپور ، حارس منظور ولد منظور احمد اور زاکر مقبول ولد محمد مقبول ساکنہ ولیگام ہندوارہ کو سماجی رابطہ عامہ کی سائٹ فیس بک پر مبینہ طور ملک مخالف پوسٹ کرنے کے الزام میں گرفتار کیا جس کے بعد ان پر مختلف دفعات کے تحت کیس درج کرکے انہیں جیل بیھج دیا گیا، بتایا جاتا ہے کہ تین طالب علموں کی گرفتاری کی خبر جونہی ان کے اہل خانوں تک پہنچ گئی تو انہوں نے اس معاملے میں پولیس سے رجوع کیا جس کے بعد عدالت گئے ۔ معلوم ہوا ہے کہ عدالت میں تین مرتبہ تینوں طالب علموں کلے ضمانت درخواست کیلئے تاریخ مقرر کی گئی تاہم ان پر شنوائی نہیں ہوئی جس کے بعد 19مارچ کو بنگلور کی ایک مقامیہ عدالت نے تینوں طالب علموں کی ضمانتی درخواست مسترد کی ۔ ضمانتی درخواست رد ہونے کے پیش نظر تینوں کشمیری طلبا کے اہل خانوں میں فکر وتشویش کی لہر دوڑ گئی ہے ۔ زیر حراست تینوں طلبا کے والدین نے ریاستی سرکار خاص کر گورنر ستیہ پال ملک سے معاملے میں مداخلت کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ان کے لخت جگروں کی رہائی کو جلد از جلد ممکن بنانے میں ریاستی سرکار اپنا رول ادا کرے تاکہ تینوں کا مستقبل تاریک ہونے سے بچایا جا سکے ۔ والدین کا کہنا تھا کہ ان کے بیٹوں نے کوئی جرم نہیں کیا ہے جبکہ انہیں بے بنیاد کیسوں میں پھنسایا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنے لخت جگروں کی سلامتی کو لیکر کافی فکر مند ہے اور مطالبہ کیا کہ انکی جلد از جلد رہائی عمل میں لائی جائے تاکہ وہ آئندہ اپنی پڑھائی جا ری رکھ سکے

CNI News Desk
the authorCNI News Desk
Current News of India (CNI) is the first news agency of Jammu & Kashmir. The agency's news reports have a massive reach as they are carried by national as well as local newspapers.

Leave a Reply