Latest News

وادی کشمیر میں نوجوان نسل کو منشیات سے بچانے کیلئے مہم زوروں پر پولیس اور دجنوں سرکار ی و غیر سرکار ی تنظیمیں سرگرم عمل ،والدین سے تعاو ن کی اپیل

WebDesk

وادی کشمیر میں نوجوان نسل کو منشیات سے بچانے کیلئے مہم زوروں پر

پولیس اور دجنوں سرکار ی و غیر سرکار ی تنظیمیں سرگرم عمل ،والدین سے تعاو ن کی اپیل

 

وادی کشمیر میں منشیات کے کار و بار اور استعمال میں روز برو ز اضافہ اور نوجوانوں کی بڑی تعداد منشیات کی طرف مائل ہونے کے بیچ سرکاری اور غیر سرکاری اداروں کی طرف سے منشیات مخالف مہم چلائی جا رہی ہے تاکہ وادی کشمیر کو منشیات سے پاک رکھا جائے تاہم عوام خاص کر والدین کے عدم تعاون کے باعث منشیات کے مکمل خاتمہ کیلئے رضاکارانہ تنظیموں کو انتہائی مشکل مراحل سے گزرنا پڑ رہا ہے ۔سی این آئی کے مطابق وادی میں بڑھتے منشیات کے کاروبار اور اس کے استعمال میں برابر اضافہ ہوتا جارہا ہے اور آئے روز منشیات سمگلروں کے قبضے سے منشیات کی کھیپ ضبط کرنے کی اطلاعات موصول ہورہی ہیں تاہم سرکاری اور غیر سرکاری اداروں کی طرف سے منشیات مخالف مہم زمینی سطح پر بے سود دکھائی دے رہی ہے ۔ اور نوجوان نسل منشیات کی عادی بنتی جارہی ہے ۔ سرکاری اور غیر سرکری اداروں کی جانب سے اگرچہ اس حوالے سے روز روز تقریبات ، سمینار اور ریلیوں کا انعقاد کیا جارہا ہے اور منشیات کے مضر اثرات نے لوگوں کو آگاہ کیا جاتا ہے تاہم زمینی سطح پر اگرد یکھا جائے تو منشیات کی روک تھام کے حوالے سے ناکامی دکھائی دے گی ۔ نوجوانوں کی جانب سے منشیات کا استعمال کرنے کا رجحان قابل تشویش ہے ۔ معلوم ہوا ہے کہ نوجوان مختلف چیزوں کا استعمال بطور نشہ کرتے ہیں جن میں سردرد کی مالش”زنڈوبام“فلیوڈ، بوٹ پالش ،اور دیگر چیزیں شامل ہیں ۔ جبکہ ادویات کی مختلف اقسام جن میں ذہنی طور مثاثرہ افراد کے علاج کےلئے استعمال کی جانے والی ادویات بھی شامل ہیں ۔ ذرائع نے بتایا کہ منشیات مخالف مہم زوروں پر چلائے جانے کے باوجود بھی وادی کے مختلف اضلاع میں فکی اور دیگر منشیات کی کاشت کی جارہی ہے ۔ ”ہوپ رے “ نامی ایک رضاکار تنظیم گزشتہ ایک سال سے منشیات کے خلاف مہم میں مصروف عمل ہے اور نوجوانوں کو منشیات کے عادت سے باہر نکالنے میں اپنی تمام طاقت زور وں پرلگا رہے ہیں تاہم عوام خاص طور پر والدین کے عدم تعاون کے نتیجے میں انہیں کافی دشوارویوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ © © © ©”ہوپ رئے “ کے ایک بنیادی رکن نے نمائندے سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ گزشتہ سال انہوں نے چند مقامی نوجوان کے ہمراہ رضا کارانہ طور پر ایک تنظیم کی بنیاد ڈالی جس کا بنیادی مقصد یہ ہے کہ منشیات کے عادی نوجوانوں کو اس لت سے باہر نکلا جائے اور وادی کشمیر خاص طور پر شہر سرینگر کو منشیات سے پاک رکھا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ تنظیم کی داغ بیل پڑنے کے بعد انہوں نے رضا کارانہ طور کئی کالجوں میں بیداری پروگراموں کا انعقاد کیا جس میں اس بات کا زور دیا گیا کہ کس طرح سے منشیات سے نوجوانوں کو دور رکھا جائے جبکہ اس کے ساتھ ساتھ ایک دستخطی مہم بھی کی گئی جس میں انہیں کافی تعاون حاصل ہوا ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ اس مہم کو کامیاب بنانے کیلئے عام لوگوں کا اہم رول ہے تاہم والدین کے عدم تعاون کے نتیجے میں انہیں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ منشیات کے خاتمہ اور نوجوانوں میں اس بدعت کو مکمل طور پر باہر نکالنے کیلئے والدین انتہائی اہم رول ادا کرتے ہیں تاکہ کئی معاملا ت میں اس طرح کے واقعات پیش آتے ہیں جہاں والدین یہ بات ماننے کیلئے تیار ہی نہیں ہے کہ ان کے بچے منشات کے دھند میں مبتلا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگرچہ پولیس و دیگر سرکار ی ا ور غیر سرکار ی تنظیمیں بھی منشیات کے مکمل خاتمہ کیلئے مہم چلانے میں مصروف ہے تاہم ابھی اس حوالے سے بہت کرنا باقی ہے ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ہوپ رئے کی کوشش یہی ہے کہ منشیات کا مکمل خاتمہ کیا جائے تاکہ ہمارے نوجوان نسل کو بچایا جا سکے ۔ تاہم اس کیلئے عوام کے ساتھ ساتھ والدین کے تعین کی بھی کافی ضرورت ہے اور انہیں ایک کلیدی رول ادا کرنا ہوگا

CNI News Desk
the authorCNI News Desk
Current News of India (CNI) is the first news agency of Jammu & Kashmir. The agency's news reports have a massive reach as they are carried by national as well as local newspapers.

Leave a Reply